آلو کے فوائد

تعارف

اکثر لوگ یہ خیال کرتے ہیں کہ آ لوصرف نشاستہ والی ایک تر کاری اور چونکہ لذيذ ہے اور کافی مقدار میں کھائی جا سکتی ہے اس لیے اسے کھانا چا ہے لیکن بہت سے لوگوں کو یہ معلوم نہیں ہے کہ آلو وٹامن اور معدنی نمکوں کا ایک اچھا ذریعہ ہے۔

آلو کے فوائد

غذائی اجزاء

آلو کے اجزاء مندرجہ ذیل ہیں پروٹین 25-22 فیصدی‘ کاربو ہائیڈریٹ (شکر جی اجزا ء)20-18 فیصد چربی بالکل نہیں الیش (خاکستر ) ایک فیصد  پانی 79- 75  فیصد ایک بڑے آلو میں، جس کا وزن 5 اونس ہو ایک سو کیلوریز ہوتے ہیں  کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جو موٹاپے کو کم کرنے والی غذا کے دوران استعمال میں آلو کھانا بی خیال کر کے قطعا ترک کردیتے ہیں کہ اس سے موٹاپا پیدا ہوتا ہے یہ خیال ٹھیک  نہیں ہے چربی کا تو اس میں نام ونشان بھی نہیں ہوتا۔

آلو کے فوائد

آلومیں لوہا اور کیلشیم  کافی مقدار میں پایا جاتا ہے اور چونکہ آلونسبت ایک سستی غذا ہے اس لیے ضروری  اس سے یہ دونوں چیزیں  حاصل کرنی چائیں آلو میں پروٹین کی موجودگی بھی اس کی غذائی قدر کو بڑھاتی ہے آلومیں معدنی نمک اور وٹامن کے اجزاء دوسری ترکاریوں کی نسبت بہت زیادہ ہوا کرتے ہیں جو بچوں کے نشوونما میں بہت امداد کرتے ہیں اس لیے بچوں کے لیے ہی نہایت مفید اور مقوی غذا شمار کی جاتی ہے لیکن چونکہ ان میں چونا کے اجزا کم ہوتے ہیں لہذا یہ کمی  دیگر میوہ جات اور سبزیوں کے استعمال سے پوری کر لی جاتی ہے۔

یہ بات خصوصیت کے ساتھ آپ یا د رکھیں  کہ آلو کے چھلکے میں بھی معدنی اجزاء موجود ہوتے ہیں ان میں فاسفورس پوٹا س میگنیشیا سوڈیم اور دیگر معدنی نمک بھی ہوتے ہیں اس لیے آپ آلو کو چھیل کر ہرگز استعمال نہ کریں اگر آپ نے ان کو چھیل کر استعمال کیا تو یا د رھیں کہ آپ کو ان کے بہت سے فوائد نہ مل سکیں گے اور آپ ان کےقیمتی اجزاء سے محروم ہو جائیں گے پکانے  سے پہلے آلوؤں کو بھی چھیلنا  نہیں چاہئے بلکہ پکانے کے بعد صرف باریک اوپری تہ کو الگ کر کے کھانا چاہیے بہتر ہے کہ تنور میں پکائے ہوئے آلو چھلکا اتارے بغیر ہی کھائے جائیں۔

 

پکانے کا طریقہ کار 

لیکن چھلکے کونزم اور قابل استعمال بنانے کا طریقہ یہ ہے کہ تنور کے اندر رکھنے سے پہلے ان کے اوپر مکھن یا گھی مل دینا آلوؤں  کو ابالنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ ان کو ایک دیگچی  کے اندر ٹھنڈے پانی میں رکھ کر پہلے تیز آنچ دی جائے یہاں تک کہ پانی ابلنے لگے اس کے بعد آنچ ہلکی کر دی جائے تا کہ آ ہستہ آہستہ آلو گل جائیں آلوؤں کو بھاپ پر پکانے یعنی  دم پخت  کرنے کا طریقہ ابالنے سے بہتر ہے اس لیے کہ اس کی غذائی قدریں اس طرح قطعا ضائع نہیں ہوتیں اس طرح پکانے کیلیےدیگچی میں پہلے ابلتا ہوا پانی ڈالنا چاہیے۔

آلو کے فوائد

آلوایک مکمل غذا

ڈاکٹر ہینڈیڈ ڈنمارک کے چیف ہیلتھ آفیسر ہیں: انھوں نے عمر بھر کے تجربے میں دیکھا ہے کہ انسان کی پرورش کے لیے کون سی غذا زیادہ مفید ہے آپ نے آلو کےمطلق مسلسل  تجربات کے بعد ایک ایسا اصول دریافت کیا کہ جس سے سارے ڈنمارک میں ایک تہلکہ چھا  گیا ڈاکٹڑ مذکور نے یہ ثابت کیا ہے کہ آلو میں نہایت مقوی اجزاء ہوتے ہیں اور صرف آلو کھا کر ہی انسان مضبوط رہ سکتا ہے اس میں دوسری اچھی سے اچھی غذا کھانے والے آدمی کی نسبت کسی بھی قسم کی کمی  نہ ہوگی۔

آلو کے فوائد

گزشتہ جنگ عظیم کے وقت ڈاکٹر ہنڈریڈ کے زیرمشورہ ڈنمارک کے افسران نے اپنے ملک میں کھایا جانے والا سارا گوشت جرمنی کو دیا اور اپنے ملک کے باشندوں کے لیے صرف آلو کی ہی خوراک رکھی  اس آلو کے تجربے سے کسی کی طاقت اور طبیعت میں کسی قسم کی خرابی پیدا نہیں ہوئی  تب سے سارے ڈنمارک میں ڈاکٹر ہنڈیڈک کو ڈاکٹر پوٹیٹ“ کے نام سے پکارا جاتا ہے اور ان کا نام ہر بچے  کی زبان پر چڑھا ہوا ہے۔

انھوں نے اپنے تجربات کی کہانی خود  لکھ کر شائع کی ہے  وہ لکھتے ہیں کر میری عمرکا آج  66 واں سال ہےمیں نے اپنے پچھلے 33 سال اسی  تحقیقات میں گزارے ہیں کہ انسان کے لیے کون سی غذا مفید ہے میری تحقیقات اور تجربے کی خصوصیت یہ ہے کہ میں نے اس کو انسان پر اچھی طرح آزمایا ہے.

بہت سے سائنسدان اور ڈاکٹر اپنے تجربے چوہوں پر کرتے ہیں  مختلف قسم کی خوراک چوہوں کو کھلا کر اس کے مختلف نتائج  کونوٹ کرتے اور ان کے مطابق ہی انسان کے لیے مفید یا مقوی غذا تجویز کرتے ہیں مگر اصل میں انسان کے لیے مفید اور مضر غذا کا فیصلہ کرنے کے لیے خاص انسان پر ہی آزمائش کر کے دیکھنا ضروری ہے۔

آلو کے فوائد

آج سے 33 سال پہلے میں نے اپنا تجر بہ اپنے گھر ہی کے ایک ممبر پر کیا اس وقت میں نے صرف پروٹین والی چیز کھلانا ہی طے کیا دس سال تک یہی تجر بہ چلتا رہا اور حیرانی کی بات ہے کہ میری چارلڑکیاں غضب کی طاقتور بن گئیں وہ اتنی طاقتور ہیں کہ ہزاروں میں ویسی  نہیں مل سکتیں اس تجربے کے بعد میں نے عوام میں سبزی خوری کا پرچار کرنا شروع کیا اس تجربے سے بھی ملک  میں ایک طرح کھلبلی مچ گئی.

میری تجویز کردہ غذا پر روزانہ خرچ صرف چار آنے ہوتا ہے یہ  سب کے لیے حیرانی کی بات تھی لیکن آخر کار میرے تجربات کا ہی نتیجہ نکلا کہ خود گورنمنٹ نے میرے لیے ایک لیبارٹری بنوا دی میرے تجربات کی صداقت اور اہمیت کا ثبوت تھا اس میں شک نہیں کہ تب سے آج تک میرے تجربے برابر چل رہے ہیں۔

  یہاں مجھے صرف آلو کے بارے میں ہی کچھ کہنا ہے 1912ء سے پیشتر کسی بھی ڈاکٹر یا سائنسدان نے ہی کھوج نہیں کی تھی کہ آلوہی  بہترین غذا کے طور پر استعمال کیا جاسکتا ہے یہ میرا ہی کام تھا میں اور میرے ایک دوست جنوری 1912ء سے صرف آلو پر گزارہ کرنے لگے  پہلے میرا خیال تھا کہ اس غذا سے پرورش کے لیے ضروری پروٹین کی کمی  پڑ جائے گی اور ہمیں انڈے اور گوشت کا استعمال کرنا پڑے گا مگر اس کی ضرورت بالکل ہی محسوس ہی نہیں ہوئی اور ہماری صحت اتنی اچھی رہی جتنی کہ دوسری اچھی طاقت بخش غذا کھانے والوں کی رہتی ہے۔

 

میں اپنے ایک مالی کی مثال پیش کرتا ہوں وہ چھ ماہ تک صرف آلو اور ساگ سبزی  کے رس  اور سادہ پانی پر گذر کرتا رہا میری تجربہ گاہ میں وہ صبح کے 8 بجے سے دوپہر کے تین بجے تک کام کرتا تھا اور گرمی کے دنوں میں توصبح  تین بجے  اٹھتا اور تب سے لے کر سارا دن اپنے کام میں لگا رہتا تھا  اتنا کام کرتے ہوئے سے ذرا بھی تھکاوٹ محسوس نہیں ہوتی تھی اس کی خوراک کی مقدار بھی دیکھ لیجیے ڈھائی کلو آلو  اور نصف چھٹانک ساگ کا رس ۔

بعد میں اسے کھیت میں مزدور کی طرح کام کرنے کے لیے بھیج دیا وہاں اسے تین مہینے تک دن میں چودہ چودہ گھنٹے کام کرنا پڑا اس وقت اسے خوراک کی مقدار بڑھانی پڑی تھی اڑھائی کلوکی بجائے چارکلو آلو اور نصف چھٹانک کی بجائے3/4 چھٹانک ساگ کا رس وہ استعمال کرتا تھا ہمارے کام کر نے والے نقشہ کے مطابق اس کے کام کی رفتار کم ہونے کی بجائے بڑھ گئی تھی انھیں دنوں ایک بار کام کے وقت در میان میں کھانا کھانے کے لیے یا ڈیڑھ گھنٹے کا وقت دے کر ہی لگاتار دو دن اور ایک رات بھر اس سے کام لیا گیا تھا۔

 

:پروفیسر اینڈ کا تجر به

میرے ان حیرت انگیز تجربات کے بعد جرمنی کے ہیل  شہر کے پروفیسر اینڈر نے بھی آلو کا تجربہ کر کے دیکھا ہے اور اپنی یہ رائے ظاہر کی ہے کہ اب صرف آلو کھا کر ہی انسان پر طاقت ور اور تندرست رہ سکتا ہے  آلو میں پورا پورا مقوی مادہ موجود ہے ڈاکٹر اینڈ ر ہالڈین کی طرح کولون کے دو پروفیسرنے بھی یہ تجربے کیئے تھے۔

  انھوں نے اپنی راۓ اس طرح قلمبند کی ہے کہ میں اپنے تجربے میں ڈاکٹر ہنڈیڈ کی طرح پوری کامیابی ہوتی ہے اس لیے ہم کہہ سکتے ہیں کہ ایک پونڈ گوشت میں جتنا مقوی مادہ ہوتا ہے اتنا ہی ایک پونڈ آلو میں بھی ہے خاص بات یہ ہے کہ ہم نے ایسے ہی آلو لئے تھے جن میں پروٹین بہت کم تھی پھر بھی کوئی فرق نہیں پڑا آلو صرف عمدہ غذا ہی نہیں بلکہ وہ ایک اعلی دوائی بھی ہے.

آلو کے فوائد

اس سے یورک ایسڈ کی تیزی کم ہوجاتی ہے اس لیے مرض میں یہ دوائی کے طور پر استعمال ہوتا ہے اس کو بطور غذا استعمال کرتے وقت ایک بات دھیان میں رکھنی چاہیے کہ جس پانی میں آلو ابالا جاۓ اس پانی کوپھینک  نہیں دینا چاہیے کیونکہ اس پانی میں آلو سے داخل ہونے والے وٹامن اور کھار زیادہ مقدار میں ہوتے ہیں۔

 

آلو کا بطور دوا استعال

بعض لوگ کہتے ہیں کہ آلودیر ہضم اور ریاح پیدا کرنے والا ہے لیکن یہ  خیال غلط ہے آلو جلد ہضم ہونے والی چیز ہے چونکہ اس میں قدرتی کھارہے اس لیے جسم میں کھٹائی اور یورک ایسڈ کو زائل کرتا ہے لہذا یہ ریاح پیدا نہیں کرتا بلکہ ہر قسم  کے ریاح کو دور کرتا ہے دائمی قبض انتڑیوں کی سڑاند جگر میں نقص یورک ایسڈ گوٹ  درد ریح  درد گردہ اورجلد دھر کے امراض میں کئی ماہ تک صرف آلو کی خوراک رکھی جاسکتی ہے جو نہایت مفید ثابت ہوتی ہے۔

آلو کے فوائد

گردے کی  پتھری

گردے کی  پتھری کو صرف آلو کی خوراک پتھری کو بہت جلد کم کردیتی ہے بشرطیکہ ان کے ساتھ دن میں کم از کم تین چار لیٹر  پانی پیا جائے اس طرح پھری آہستہ آہستہ بغیر تکلیف کے خارج ہو جاتی ہے یورپ کے ایک مشہور ڈاکٹر کا قول ہے کہ گردے کی پتھری میں اگر اور علاج نہ کیا جائے تو آ لوکا ہی استعمال پتھری کو توڑ کر نکال دیتا ہے۔

طبی طور پر آلو  قبض کشا ہے پیشاب آور ہے اور طبیعت کو آرام دیتا ہے۔

آلو کے فوائد

دودھ پیتےبچوں کیلیے آلو کے فوائد 

دودھ پیتے بچے کو آ لو کا شوربہ اور آلو کا بھرتہ مفید ہے لیکن جس طریق سے آلوکو پکایا جاتا ہے اس سے اس کے بہترین غذائی اجزاء تباہ ہو کر رہ جاتے ہیں عام طور پر خصوص بھرتہ وغیرہ بنانے کے لیے پہلے آلوؤں کو پانی میں ابالا جاتا ہے اور پھر چھلکے اتار کر پھینک دیئے جاتے ہیں اور وہ پانی بھی آلوؤں کے اس پانی کو پھیکنے کے معنی ہیں ساٹھ فیصد  غذائی اجزاء کو ضائع کرنا اس لیے آلوؤں سے پورا فائدہ اٹھانے کے لیے یہ لازمی ہے کہ اس پانی کو ضائع نہ کیا جائے۔

بلکہ اسے نتھار کر پھر اسی میں آلو پکائے جائیں اس سے بھی بہتر طریقہ یہ ہے کہ آلو کو چھلکے سمیت ہی پکایا اور اسی طرح کھایا جائے اس سے نہ صرف آلو کے غذائی فائدے  برقرار رہتے ہیں بلکہ یہ آنتوں سے چمٹے  ہوئے فضلے کو بھی خارج کرتا ہے بچوں کو جب بازار کا دودھ دیا جارہا ہو اور سنگترے کا رس میسر نہ آ سکے تو انھیں آلوکا سوپ دیا جاسکتا ہے ذرا بڑے بچوں کے لیے بھوبھل میں بھنے ہوئے آلو اچھی پرورش کرنے والی غذاہے۔

آلو کے فوائد

آلو کے استعمال کا سب سے اچھا طریقہ

آلو کے استعمال کا سب سے اچھا طریقہ اسے چولھے کی بھوبل میں بھون کر استعمال کرنا ہے بہر حال آلو پکا کر کھائے جائیں یا بھوبھل میں بھون کر دونوں صورتوں میں معمولی قسم  کا مرچ مسالہ استعمال کرنا چاہیے آلو کے ہمراہ پالک اور کا ہو وغیرہ کا ساگ چقندر شلغم  کریلے ٹماٹر اور دوسری تر کاریاں بے تکلف استعمال کی جاسکتی ہیں آلو گٹھیا کے علاوہ دیگر اعصابی امراض کے مریضوں پر استعمال کئے گئے تو مفید ثابت ہوئے ہیں اور ان کو ان سے خاطر خواہ فائدہ پہنچا ہے جس سے بالکل صاف ظاہر ہے  اللہ پاک  نے آلومیں غذائیت بھی رکھی ہے اور دوائیت بھی۔

آلو کے فوائد

آلوؤں کا شربت

آلوؤں کا شربت بے حد مقوی باہ ثابت ہوا ہے جس کے بنانے کی ترکیب یہ آلوؤں کے موٹے موٹے چھلکے  اتار کر کھولتے ہوئے پانی میں ڈال کر ایک دو جوش دیں پھر نیچے اتار کر چھان لیں اور مصری ملا کر قوام کر کے کام میں لائیں یہ شربت قوت باہ پیدا کرتا ہے پٹھوں کو طاقت بخشتا اور خون صالح  پیدا کرتا ہے آلوؤں کا استعمال جب تک رہے تھوڑی بہت سبزیاں اور میوہ جات کا استعمال ضرور ہے کیونکہ میں یہ پہلے بتا چکا ہوں کہ ان میں چونے کے اجزاء کم ہوتے ہیں اور دیگر سبزیاں ان اجزاء کو پورا کر دیتی ہیں۔

آلو کے فوائد

Leave a Comment

Translate »