فالسہ کے فوائد

تعارف

فالسہ شروع میں سبز رنگ کا  پھر سرخ رنگ کا  اور آخر میں سیاہی مائل رنگ کا  ہو جاتا ہے اس کا ذائقہ میٹھاس والا اور ترشی ہوتا ہے فالسہ کے پھول زرد ہوتے ہیں اس کا مزاج سرد ہے اس کے بے شمار فوائد ہیں.

فوائد

 فالسہ مقوی دل ہے فالسہ جگر اور معدہ کو قوت بخشتا  ہے  پیاس بجھاتا ہے پیشاب کی سوزش کو ختم کرتا ہے یہ مْبَّرِد اور قابض ہوتا ہے.

معدہ کی قوت

 فالسے کا شربت  بھی بنتا ہے  جسے معدے  کی طاقت کیلیے استعمال کیا جاتا ہے.

گرمی کے بخار

گرمی کے بخار کو فائدہ دیتا ہے.

سوزاک اور ذیابیطس

  ذیابیطس اور سوزش  میں فالسہ  جڑ کا چھلکا استعمال کرانا مفید ہوتا ہے خوراک کی مقدار ایک ماشہ  پانی کے ساتھ صبح اور شام.

خناق

 فالسے کے پانی سے غرارے کرنے پر  خناق سے آرام  ملتا  ہے.

ہچکی اور قے

 فالسہ قے اور ہچکی کو روکتا  ہے.

تپ دق

 تپ دق میں فالسہ  کا استعمال بہت زیادہ فائدہ مند ہے.

معدے اور سینے کی گرمی

 فالسہ  سینے اور معدے کی گرمی اور جلن کو ختم  کرتا ہے.

دل بے چینی

 فالسہ  بے چینی دل کی دھڑکن کو ختم  کرتا ہے.

ذیابیطس

 ذیابیطس کےمریض کو  فالسے کے درخت کا چھلکا پانچ تولے اور کوزہ مصری تین تولہ لیں چھلکا رات کو پانی میں بھگو دیں اور صبح  کوزہ مصری میں ملا کر پلائیں مریض کو یہ  خوراک پانچ دن  تک پلانا بہت فائدہ مند ثابت ہو گا  ہے اس سے علاج سے شوگر کنٹرول ہو جائے گی.

جگر

فالسہ جگر کے لیے بہت فائدہ مند ہے  جگر کی گرمی کو  دورکرنے کیلیے  فالسے کو جلا کر اس کی کھار بنا لیں  اور تین رتی صبح اور تین رتی  شام کو استعمال کریں.

آدھ کلو پکا  فالسہ، ایک کلو  چینی لیں  سب سے پہلے فالسے کو پانی میں اچھی طرح پیس کر چھان لیں اور اس کے بعد چینی میں شامل کر کے قوام تیار کریں ، جب قوام گاڑھا ہو جائے تو شربت بن گیا ہے شربت کو ٹھنڈا کر کے بوتل  میں بند کر لیں یہ شربت معدہ اور  دل کو طاقت دیتا  ہے  جگر کی گرمی  کو سکون بخشتا  ہے دست پیاس الٹی میں بہت فائدہ دیتا ہے.

معدہ

 جن کے  معدے میں  بھاری پن  رہتا ہو طبیعت الٹی والی ہوتی  ہو اورکھانے والی  نالی میں جلن محسوس ہوتی ہو ایک پاؤ فالسہ کا پانی نکال کر تین پاؤچینی ملا کر گاڑھا شربت تیار کر یں یہی شربت تین  بڑے چمچےہر کھانے کے بعد چاٹ  لیں اس سے بہت  فائدہ ہوتا ہے.

ذیابیطس

 فالسہ کے  درخت کی چھال کے باریک چھوٹے  ٹکڑے کرلیں  ایک چھٹانک چھال کے ٹکڑوں میں آدھا  چھٹانک بنولہ کوٹ کردونوں کو ایک کلو  پانی میں بھگو دیں دو دفعہ  چھان کر اورنمک ملا کر پلانے سے ذیابیطس کا مرض کنٹرول ہوجائے گا.

 

پھوڑے پھنسیوں

فالسے کے پتے رگڑ کر  پھنسیوں اور پھوڑوں  پر لگانے سے اسی وقت  فائدہ ہوتا ہے.

تیز بخار

  فالسے کا جوس سخت اور تیز بخار میں  دینے سے مریض کو سکون ملتا  ہے.

جوڑوں کے درد

 فالسے کے  جڑ کی چھال کا جوشاندہ پینے سے  جوڑوں کے درد میں بے حد مفید ہوتا ہے.

فساد خون

  فساد خون میں فالسہ  کا شربت بہت زیادہ فائدہ مند ہے.

سوزاک سینے کی جلن

فالسے کے پودے کی جڑ کی چھال دو تولے رات کے وقت بھگو کر صبح کے وقت اس کا پانی پینے سے سوزاک سینے کی جلن اور پیشاب کی سوزش دور ہوتی ہے.

خون اور صفراء

فالسے کا لگاتار کھانا  خون اور صفراء کی تیزی کو ختم  کرتا ہے.

مثانے کی گرمی

 فالسے کے پودے کے پتے یا  بیج یا  رس ان میں سے کوئی  ایک کو پانی میں رگڑ کر پینے سے مثانے  کی گرمائش  ختم  ہو جاتی ہے.

سرد مزاج

 فالسہ ٹھندے مزاج والے لوگوں کیلیے  نقصان دے  ہوتا ہے سینے اور پھیپھڑوں کو نقصان پہنچاتا ہے اس لئے احتیاط سے اسے استعمال کریں اور اپنی ضرورت سے زیادہ کھانا نہیں  چاہیئے اور اگر زیادہ کھا لیں تو پھرتھوڑی سی  گل قند کھا لیں اس سے فالسے کے مضر اثرات نہیں ہوتے.

عرق گلاب

فالسے کے شربت میں  گلاب کا عرق ڈال کرپینے سے اس کے فائدے  دگنے ہو جاتے ہیں.

قبض

 فالسہ  کے بیج  سْدَّہ پیدا کرنے والے اور قابض کرتے ہیں فالسہ کھانے سے خشکی اور قبض پیدا ہو جاتی ہے اگر ایسا ہو تو گلقند  یا معجون فلا سفہ کا ایک چمچ   فالسے کے بعد کھا لیں  تو پھر قبض  اور خشکی والا  نہیں رہتا فالسے  مصفیٰ خون بھی ہیں. 

Phalsa Ke Fawaid-Phalsa Ke Fayde/فالسہ کے فوائد

Leave a Comment

Translate »